Dental Marketing – The Australian Way

As an Australian dental specialist, it’s intriguing to look over the lake at my dental companions in the USA and watch the manner in which they can advertise their dental practices. I can’t help suspecting that dental specialists in certain pieces of the US can do nearly anything they please to advance their training on the web! They are utilizing stock pictures generously all through their sites to delineate dental administrations like corrective dentistry and teeth brightening. They can use when pictures of their work. They even appear to be ready to utilize understanding tributes on their sites. They effectively urge their patients to post positive surveys about their training on different locales around the web. Their features can be, and are, intense and punchy, loaded up with guarantees, cases, assurances and shout marks! From numerous points of view it’s dental showcasing paradise!

Dental Practice Marketing in Australia

In Australia we are considerably more confined in the manner that we are permitted to advance our dental practices, regardless of what media we are utilizing to share the special message.

We should take stock photography pictures for instance. We can’t, as enrolled dental professionals in Australia, to utilize a stock picture of a model with a wonderful grin on a page on our site that advances restorative dentistry or teeth brightening. This isn’t on the grounds that it was not our dentistry that was liable for the making of this delightful grin! We are needed to shield individuals from bogus assumptions regarding dentistry and what it can accomplish for them. Despite the fact that numerous patients will encounter a decent outcome from teeth brightening, a few people will never wind up with teeth like the model in the stock photo: not without facade, or a gum lift, or a full dental makeover. However, a few guests to your site will take a gander at the stock photograph, see that it is on a page about teeth brightening, and expect that their own grin will look similarly as delightful after teeth brightening treatment. These are a portion of the individuals that our guidelines are attempting to secure.

اسلام آباد (ویب ڈیسک)دین اسلام چار شادیوں کی اجازت کیوں دیتا ہے ؟اگر تمھیں ڈر ہو کہ یتیم لڑکیوں سے نکاح کرکے انصاف نہ رکھ سکو گے تو اور عورتوں میں سے جو تمھیں اچھی لگیں تم ان سے نکاح کر لو ِدو دو تین تین چار چار سے .لیکن اگر

تمھیں برابری نہ کر سکنے کا خوف ہوتوایک ہی کافی ہے یا تمہاری ملکیت کی لونڈی …یہ ذیادہ قریب ہے.(ایسا کرنے سے ناانصافی اور(ایک طرف جھک پڑنے سے بچ جاؤ…اس آیت کی تفسیر حضرت عائشہ سے اس طرح مروی ہے..کہ صاحب حیثیت اور صاحب جمال کی وجہ سے اس سے شادی تو کر لیتالیکن اس کو دوسریعورتوں کی طرح ان کا پورا حق مہر نہ دیتا…اللہ تعالی نے اس اس ظلم سے روکا کہ اگر تم گھر کی یتیم بچیوں کے ساتھ انصافنہیں کرسکتےتو تم ان سے نکاح مت کرو.تمہارے لئے دوسری عورتوں سے نکاح کرنے کا راستہ کھلا ہے..صحیح بخاری .کتاب تفسیر…..بلکہ ایک کی بجائے دو سے تین سے حتی کہ چار سے تم نکاح کر سکتے ہو.. بشرطیکہ ان کےدرمیان انصاف کے تقاضے پورے کرسکو.ورنہ ایک سے ہی نکاح کرویا اس کی بجائے لونڈی پر گذارا کرو.اس آیت سے معلوم ہوا کہ ایک مسلمان مرد (اگر وہ ضرورت مند ہو(تو چار عورتیں بیک وقت اپنے نکاح میں رکھ سکتا ہے….لیکن اس سے ذیادہ نہیں….جیسا کہ صحیح احادیث میں اس کی مزید صراحت اور تحدید کردی گئی ہے.نبی کریم نے جو چار شادیاںکیں وہ آپ کے خصائص میں سے ہے جس پر امتی کے لئے عمل کرنا جائز نہیں..ابن کثیر..ایک ہی عورت سے شادی کرنے میں عافیت ہے،.کیونکہ ایک سے ذیادہ بیویاں رکھنے کی صورت میں انصاف کا اہتمام بہت مشکل ہے.جس کی طرف قلبی میلان ذیادہ ہوگا.ضروریات ذندگی کی فراہمی میں ذیادہ توجہ بھی اس کی طرف ہوگی…اور دوسری یا تیسری شادی آج کے دور میں وہی کرتا ہے جس کا
قلبی میلان پہلی والی سے کم ہوجائے…یوں بیویوں کے درمیان وہ انصاف کرنے میں ناکام رہے گا…اور اللہ کے ہاں مجرم قرار پائے گا…قرآن نے اس حقیقت کو دوسرے مقام پر نہایت بلیغانہ انداذ میں اس طرح بیان فرمایا…ولن تستطیعوا ان تعدلوا بین النساءولوا حرصتم فلا تمیلو کل المیل فتذروھا کالمعلقہ..اور ہرگز اس بات کی طاقت نہ رکھو گے کہ بیویوں کے درمیان انصاف کرسکو .اگرچہ تم حرص رکھو…(اس لئے یہ تو ضرور کرو(کہ ایک طرف نہ جھک جاؤ.کہ دوسری بیویوں کو بیچ ادھڑ میں لٹکا رکھو…اس سے معلوم ہوا کہ ایک سے ذیادہ شادی ناگذیر ضرورت کے بغیر کرنا نامناسب اور نہایت خطرناک ہے.. دین اسلام ایک مکمل ظابطہ حیات ہے اور اسلام میں زندگی کے تمام پہلووں کو بڑی تفصیل اور مروجہ انداز سے بیان کرتا ہے. دوسرے مذاہب میں غلطی کی گنجائش تو ہوسکتی ہے یا پھر فرد واحد کے بنائے ہوئے اصول و ضوابط تو شامل ہوسکتے ہیں پر دین اسلام میں ہر انسان کے لیے مکمل رہنمائی موجود ہے .اسی طرح ایک اہم بات کے جس پر دوسرے مذاہب کے ماننے والے لوگ اکثر یہ سوال کرتے ہیں کہ دین اسلام مسلمان کو چار شادیاں کرنے کی اجازت کیوں دیتا ہے. اس کو کثیرالازدواجی زندگی گزارنے کی اجازت کیوں دیتا ہے.سب سے پہلے اس بات کو ذہن نشین کر لیں کہ دنیا کا کوئی مذہب یہ نہیں کہتا کہ آپ صرف ایک شادی کریں اس حوالے سے قران پاک کے ارشاد کو دیکھتے ہیں ’’اور اگر تم کو اس بات کا خوف ہو کہ یتیم لڑکیوں کے
بارےانصاف نہ کرسکوگے تو ان کے سوا جو عورتیں تم کو پسند ہوں دو دو یا تین تین یا چار چار ان سے نکاح کرلو. اور اگر اس بات کا اندیشہ ہو کہ (سب عورتوں سے) یکساں سلوک نہ کرسکو گے تو ایک عورت (کافی ہے) یا لونڈی جس کے تم مالک ہو. اس سے تم بےانصافی سے بچ جاؤ گے‘‘ قران پاک کے اس ارشاد سے ہم صاف کہہ سکتے ہیں کہ اسلام مسلمان کو چار شادیوں کی اجازت تو دیتا ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ کچھ احکامات بھی بتا تا ہےکہ اگر انسان کی استطاعت ہے کہ وہ چار بیویوں کے ساتھ یکساں سلوک کر سکتا ہے اور چاروں کو ایک جیسے حقوق دے سکتا ہے تو اسلام اس کو چار شادیوں کی اجازت دیتا ہے لیکن اگر انصاف نہیں کرسکتا تو ایک ہی شادی اس کے لیے بہتر ہے .اس حوالے سے ایک اور بھی آج کے دور میں یہ بات بہت اہمیت کی حامل ہے کہ آج کے دور میں عورتوں کی تعداد مردوں کے مقا بلے میں بہت زیادہ بڑھ گئی ہے اور ماضی میں بھی عورتوں کی تعداد مردوں کے مقابلے میں زیادہ تھی تو اس وجہ سے بھی کیونکہ اگر ایک شخص کی ایک بیوی ہے تو باقی کرڑوں عورتیں جن کا رشتہ نہیں ہو پاتا تو ایسی صورتحال میں عورت کے پاس تو ہی موقع ہیں ایک یہ کہ وہ کسی شخص سے شادی کر لے یا پھر کسی غلط راستے پر لگ جائے تو اس صورتحال سے بھی اسلام چار شادیوں کی اجازت دیتا ہے اور اس طرح معاشرے میں موجود برائی کو روکا جاسکتا ہے. عورتوں کی تعداد فطرتاً زیادہ ہے.معاشرے میں موجود عریانی اور فحاشی کو ختم کرنے کے لیے سب سے پہلے شادی کے نظام کو سستا اور عام بنانے کی ضرورت ہے اور پھر شادی پر ہونے والے اخراجات اور رسم و رواج کو ختم کرکے ہی ایک اسلامی اور پاک صاف معاشرے کا قیام ممکن ہ

The Fine Art of Crafting a Marketing Message for Australian Dental Practices

In Australia we need to make our dental promoting messages significantly more cautiously. On our sites, for instance, it’s simpler just to express that we offer a specific assistance instead of dedicate a page to teaching our guests, and clarifying in some detail the upsides and downsides of the administration. On the off chance that we decide to teach, we have to make it perfectly clear that not every person will get ideal outcomes from the administrations we give. We are needed to give admonitions about the danger of medical procedure and other intrusive techniques. On the off chance that we try to represent our clarifications with pictures, we have to ensure that individuals comprehend that the picture is of somebody we ourselves treated, what the treatment was, the point at which the picture was taken, why the treatment was effective for this specific patient and why the treatment probably won’t be so fruitful for other people. None of this clarification is permitted to be in fine print either!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *