Employment Opportunities For Australian Graduates

Probably the best offer that an understudy can get is having the option to concentrate in Australia. In any case, there is a considerably all the more luring open door that you will without a doubt discover compelling, that of getting an Australian work just after graduation. Furthermore, fortunately, there are many openings for work hanging tight for you in the nation, when you venture out of the grounds.

Actually, Australia is effectively reassuring unfamiliar understudies to work in the nation after their graduation. This is really the fundamental motivation behind why the Australian government has established changes that made gaining residency a lot quicker for understudies. They have likewise been effectively inviting new alumni in the nation to come and work in Australia.

So what is there in put away for the new alumni in Australia? As have been said there are without a doubt a lot of occupations accessible. You should simply look and you will clearly locate the one that will suit you.

The clinical field is, as of current, the greatest business of new alumni, both locally and abroad. Nursing occupations represent the biggest majority of business positions here. Actually, the interest is very high, that Australia has opened the market to unfamiliar alumni. Following intently behind these are parental figure occupations. These additionally have filled altogether as of late that schools inside Australia have begun offering guardian courses to would be unfamiliar understudies, with occupations previously hanging tight for them.

Beside the over two, new specialists are likewise required for Australian business. So as to pull in new alumni, a few medical clinics have even offered bearing further investigations of specializations to new specialists. The huge compensation is additionally an additional fascination for would be candidates.

 سعودی عرب کی وزارت حج و عمرہ نے بیرون سعودی عرب سے عمرہ زائرین کے استقبال کے لیے ضوابط کا اعلان کیا ہے۔ بیرون ملک سے عمرہ زائرین کی آمد کا سلسلہ اگلے اتوار سے شروع ہو رہا ہے۔ عمرہ ادائیگی کی بتدریج بحالی کا یہ تیسرا مرحلہ ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق تیسرے مرحلے میں بیرون ملک سے عمرہ کے لئے مملکت آنے والوں کی عمر کی حد 18 سے 50 برس مقرر کی گئی ہے۔

 

ان متعمرین کو کرونا وائرس سے محفوظ ہونے کے ثبوت کے طور پرپی سی آر ٹیسٹ پیش کرنا ہو گا۔ یہ رپورٹ عمرہ کے لیے آنے والے زائرین میں سعودی حکومت کی منظور شدہ لیبارٹریوں کی جاری کردہ ہونی چاہیے۔ رپورٹ سفر سے 72 گھنٹے قبل تیار کی گئی ہو۔اس کے علاوہ بیرون ملک سے آنے والے عمرہ زائرین کے پاس الحرمین الشریفین میں عمرہ، نماز ادائیگی اور مسجد نبوی کی زیارت اور روضہ مطہرہ میں صلاہ وسلام پیش کرنے کی پیشگی منظور ہونا لازمی ہے۔

یہ منظوری اعتمرنا نامی ایپ کے ذریعے تمام قواعد وضوابط مکمل کرنے کی بعد ہی حاصل کی جا سکتی ہے۔ بیرون ملک سے عمرہ زائرین کو منظور شدہ مدت کے دروان مملکت آمد اور واپسی کے کنفرم ریٹرن ٹکٹ بھی پیش کرنا ہوں گے۔بیرون ملک سے عمرہ کے لیے جانے والے متعمرین کو دن کے تین کھانوں کی سہولت فراہم کرنے والے رہائش گاہ کی بکنگ کا ثبوت بھی ہمراہ لانا ہو گا۔

 

تین دن آئیسولیشن میں گزارنے کے دوران انہیں عمرہ ادائیگی کے دوران احتیاطی تدابیر سے آگاہ کیا جائے گا جن پر وہ سعودی عرب آمد سے واپسی تک انتہائی ذمہ داری سے عمل درآمد یقینی بنائیں گے۔شرائط میں عمرہ کمپنی پر زور دیا گیا ہے کہ وہ عازم عمرہ کی سفری دستاویزات میں فراہم کردہ معلومات جن میں تاریخ پیدائش وغیرہ شامل ہے کو سفر سے 34 گھنٹے قبل درست قرار دے کر عمرہ سسٹم میں ڈالا جائے۔

 

ہر عازم عمرہ کا ٹکٹ، فلائٹ، روانگی کا شہر، وقت، آمد کا شہر، تاریخ اور وقت سسٹم میں ایڈ کرنا لازمی ہے۔ اور واپسی سے متعلق بھی یہی معلومات سسٹم میں ایڈ کی جائیں گی۔اس کے علاوہ مکہ اور مدینہ میں رہائش کی تفصیل سسٹم میں شامل کی جائے گی۔ سعودی عمرہ کمپنی اور ایجنٹ ان معلومات کی صحت سے متعلق ذمہ دار ہوگا۔ ان معلومات کے غلط ہونے کی صورت میں بیرونی ایجنٹ ایسے عمرہ زائرین کو سعودی عرب آمد پر تین زورہ لازمی آئیسولیشن میں رکھوانے کے پابند ہوں گے۔

 

اس کا انتظام اسی ہوٹل میں کیا جائے گا، جہاں عمرہ زائر کا قیام ہوگا۔ ایسے عمرہ زائرین کے پچاس پچاس کے گروپ بنا کر عمرہ کمپنی ان کا ایک گائیڈ مقرر کرے گی۔ ان افراد کے لیے ایک پروگرام ترتیب دیا جائے گا جس میں ان کا سفر، رہائش اور ٹرانسپورٹ شامل ہوگی۔ اس پروگرام کو بیرون ملک سے عمرہ زائرین کی اعتمرنا اپپ میں بک شیڈول سے ہم آہنگ کیا جائے گا۔

 

وزارت حج و عمرہ نے ہدایت کی کمپنی عمرہ پیکج میں طے کردہ سہولتوں جن میں رہائش، ٹرانسپورٹ، فیلڈ سروسز، انشورنس، خوراک کی فراہمی کو یقینی بنانے کے عمل کی نگرانی کرے گی۔ کسی بھی خلاف ورزی کی صورت میں فوری تدارک کی کارروائی کرے گی۔ رہائش گاہ سے حرم تک لانے لیجانے، میقات تک رسائی اور پر گروپ کے لیے گائیڈ کی تعیناتی کو یقینی بنانا بھی کمپنی کی ذمہ داری ہے۔

Beside the clinical field, Australia’s data innovation industry is likewise a problem area for new alumni. Software engineers and web pros are among the top posts that numerous organizations in the nation are looking for. Programming pros are likewise a lot of searched after. End client positions, for example, assistants and encoders, are likewise very various.

Then, beside PC work force, the assembling business is additionally employing a lot of specialized individuals yearly. Numerous positions are accessible for individuals of contrasting instructive foundation, going from those with professional testaments to the individuals who have higher educations. The development business is, in like manner, on a chase for new alumni.

Another industry that has encountered a blast as of late, and accordingly, is looking for new laborers, is the travel industry and neighborliness industry. Significant level situations for new alumni incorporate directors, managers and specialized guides. On the majority, then again, candidates with degrees a nd specializations are profoundly preferred. Again unfamiliar understudies are especially invited to apply, either for a brief or a stable situation.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *